0

خبر پڑھ کر آپ کے رونگٹےکھڑے ہوجائینگے ، افسوسناک واقعے کہا ں پیش آیا؟ جانئے

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) سگے چچا نے 7 سالہ بھیتجی کو جنسی درندگی کا نشانہ بنا ڈالا ۔ تفصیلات کے مطابق ایک ماہ قبل محمد خان چانڈیو کی رہائشی دوسری کلاس کی طالبہ دعا ملاح گھر کے باہر کھیلتے ہوئے غائب ہو گئی تھی۔دوسرے دن اس کی نعش قریبی کھیت سے ملی۔ ٹھٹھہ کے ساحلی شہر گھوڑا باری تھانہ کی حدود میں 7 سالہ بچی دعا کو جنسی زیادتی کے بعد قتل کرنے والے ملزم ارشاد ملاح کی ڈی این اے رپورٹ آ گئی ہے۔پولیس کے مطابق ملزم مقتولہ کا سگا چچا ہے۔رپورٹ میں ملزم کا ڈی این اے بھی میچ کر گیا ہے۔پولیس نے ملزم ارشاد ملاح اور مقتولہ کے نمونے اور کپڑے ڈی این اے کے لیے بھجوا دئیے ہیں۔پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم اور اس کے ساتھی سکندر کو واقعے کےدوسرے دن ہی گرفتار کر لیا گیا تھا۔خیال رہے کہ معصوم بچے اور بچوں کے ساتھ زیادتی اور قتل کے واقعات میں کسی صورت کمی نہیں ہو رہی۔روزانہ بچوں کے ساتھ زیادتی کی کئی واقعات رپورٹ ہورہے ہیں۔ اس سے قبل راولپنڈی میں ایک ایسا ہی واقعہ پیش آیا تھا جہاں ں چچا نے 7 سالہ بھتیجی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد گھر میں ہی قتل کر دیا تھا۔ اے ایس پی سول لائن نے کہا کہ پوسٹ مارٹم کے بعد بچی سے زیادتی کی تصدیق ہوگئی ہے۔سدرہ نامی بچی کے والد نور اللہ نے پولیس کو بتایا ہے کہ جب وہ کام سے واپس گھر آیا تو گھر کا دروازہ کھلا ہوا تھا ،اس کی بیوی سو رہی تھی اور اس نے اپنی بچی کو مردہ حالت میں کمرے کے باہر پڑا ہوا دیکھا۔گھر میں مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بننے کے بعد قتل ہونے والی معصوم بچی کے حوالے سے پولیس نے بتایا ہے کہ بچی کی ناک اور منہ سے خون نکل رہا تھا اور گھٹنے پر چوٹ کا نشان بھی تھا۔پولیس نے سات سال کی معصوم بچی کے ساتھ زیادتی اور قتل کے الزام میں بچی کے چچا کو حراست میں لیا تھا۔وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے راولپنڈی میں پیش آنے والے اس افسوسناک واقعے کا نوٹس لیا تھا۔وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ متاثرہ خاندان کو ہر صورت میں انصاف کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں