25 جنوری کو بیرون ملک روانگی ۔۔۔۔ رابی پیرزادہ نے اپنی زندگی کا اہم ترین فیصلہ کر لیا ، کیا کرنے جا رہی ہیں ؟ مداحوں کے لیے خاص خبر

لاہور(ویب ڈیسک ) سابق گلوکارہ رابی پیرزادہ نے جھوٹی خبریں پھیلانے والوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ مجھے پاکستان اور یہاں کے لوگوں سے محبت ہے ، مجھے پاکستان کی مٹی سے بہت پیار ہے ۔انہوں نے سوشل میڈیاپر اپنی ایک پوسٹ میں بتایا کہ وہ 25جنوری کو عمرے کی ادائیگی کیلئےجارہی ہیں ،انہوں نے اپنی جان کو خطرے سے متعلق خبروں کی وضاحت بھی کردی۔رابی پیرزادہ کا کہنا ہے کہ وائلڈ لائف کیس میں میرے وکیل کا نام بابر افضل نہیں بلکہ حسن خالد رانجھا ہے اور ہم نے عدالت میں جان کو خطرے کی کوئی شکایت نہیں کی۔ یاد رہے کہ سابق گلوکارہ رابی پیرزادہ نے اپنی جان کو درپیش خطرات سے متعلق وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی جان کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔ سوشل میڈیا پر رابی پیرزادہ کے حوالے سے خبریں گردش کررہی ہیں کہ سابق گلوکارہ کے وکیل بابر افضل نے جنگلی جانور پالنے کے مقدمے میں رابی پیرزدہ کی عدالت میں پیشی سے استثنیٰ کی درخواست دیتے ہوئے کہا ہے کہ رابی پیرزادہ کو مسلسل دھمکیاں مل رہی ہیں اور ان کی جان کو خطرہ ہے اس لیے وہ عدالت میں پیش نہیں ہوسکتیں۔ تاہم رابی پیرزادہ نے اپنی جان کے خطرے سے متعلق افواہوں کی تردید کرتے ہوئے اسے مکمل طور پر جھوٹی خبر قرار دے دیا۔ رابی پیرزادہ نے انسٹاگرام پر وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ان کے وکیل کا نام بابر افضل نہیں بلکہ حسن خالد رانجھا ہے اور ہم نے کوئی شکایت جمع نہیں کرائی۔ رابی پیرزادہ نے جھوٹی خبریں پھیلانے والے میڈیا ہاؤسز کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ مجھے پاکستان اور یہاں کے لوگوں سے محبت ہے۔ مجھے پاکستان کی مٹی سے اور لوگوں سے پیار ہے۔رابی پیرزادہ نے اسی پوسٹ میں یہ بھی بتایا کہ کہ وہ 25 تاریخ کو عمرے کی ادائیگی کے لیے جارہی ہیں اور سب سے دعاؤں کی درخواست بھی کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں